شنبه , اکتبر 19 2019
تازہ ترین
مرکزی صفحہ / کربلاء معلیٰ / حرمِ مقدس مولا عباس (ع)۔ / مقدسات کا دفاع کرنے والوں کو موت سے ایسا اُنس ہے جیسا بچے کو اپنی ماں کے سینے سے ہوتا ہے(متولی مولا عباس)
c85862c3279c1de3b9c535dbb47ba541

مقدسات کا دفاع کرنے والوں کو موت سے ایسا اُنس ہے جیسا بچے کو اپنی ماں کے سینے سے ہوتا ہے(متولی مولا عباس)

قیقت میں کربلا کے درخت سے زندہ مثالوں کا پھوٹنا کوئی تعجب کی بات نہیں ہے کیونکہ حضرت علی علیہ السلام فرماتے ہیں کہ حق لوگوں کے ذریعے سے نہیں پہچانا جا سکتا لہٰذا تم حق کو پہچان لو اہل حق کے بارے میں تمہیں خود ہی معلوم ہو جائے گا۔

یہی وہ لوگ ہیں کہ جو امام حسین علیہ السلام کے افراد ہیں اور عشق حسینی کے درخت کی پیداوار ہیں ان لوگوں نے ورثے میں مضبوط دل پائے ہیں اور تکفیری دہشت گردوں کے حملوں کے سامنے سیسہ پلائی ہوئی دیوار بنے ہوئے ہیں تا کہ اس وطن اور اس کے مقدسات کی عزت و حرمت کو بہتر انداز میں واپس اپنا مقام دلا سکیں۔

حقیقت یہ ہے کہ تاریخ ان بہادروں کے موقف و کردار سے جیت نہیں سکتی ان بہادروں نے عاشوراء کی درسگاہ سے حاصل شدہ ثابت قدمی اور طاقت کے ذریعے دشمن کا بہت ہی شجاعت اور مضبوط دل کے ساتھ مقابلہ کیا ہے ان بہادروں میں کہیں 17 سال کا نوخیر جوان نظر آتا ہے تو کہیں 80 سال کا بوڑھا لیکن ان سب کی معنوی کیفیت ایک ہی ہے اور یہ سب انسانیت کے دشمنوں پر حملہ کرتے ہوئے اور موت کو گلے لگاتے ہوئے اسی طرح سے لطف و سکون محسوس کرتے ہیں جیسے بچہ اپنی ماں کے سینہ سے لپٹ کر لطف و سکون محسوس کرتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار نجف اشرف میں موجود اعلی دینی قیادت آیت اللہ العظمی سید علی سیستانی(دام ظلہ) کے خصوصی نمائندے اور روضہ مبارک حضرت عباس(ع) کے متولی شرعی علامہ سید احمد صافی نے 12محرّم 1438هـ کو نماز جمعہ کے دوسرے خطبے میں عسکری رضاکاروں کے بارے میں گفتگو کے دوران کیا۔

یہ بھی ملاحظہ ہو

19b89c6529a5d9833bebb0026a74c846

عراق میں تعینات پاکستان کے سفیر روضہ مبارک حضرت عباس (ع) کی زیارت

عراق میں تعینات پاکستان کے سفیر جناب ساجد بلال نے روضہ مبارک حضرت عباس علیہ …

پاسخ دهید

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *