چهار شنبه , ژوئن 20 2018
مرکزی صفحہ / مشہد و قُمِ مقدس / حرمِ مقدس امام موسیٰ رضا (ع)۔ / ( لبیک یا حسینؑ)) یعنی دنیا کے تمام ظالموں کے خلاف جنگ, متولی حرم مولا رضا
download

( لبیک یا حسینؑ)) یعنی دنیا کے تمام ظالموں کے خلاف جنگ, متولی حرم مولا رضا

ستان قدس رضوی کے متولی نے اربعین حسینی پر پیدل چل کر جانے والے زائرین کے خادموں کے الوداعی مراسم میں ((لبیک یاحسین) کے معنی کی وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ لبیک یا حسین یعنی دنیا کے تمام ظالموں اور ان کے ظلم وستم کے خلاف ایک ہمیشہ سے رہنے والی جنگ ہے ۔ انہوں نے کہا: (( لبیک یا حسین)) کی آواز تحریک حسینی کے تسلسل اور ہر ظلم وستم کے خلاف جنگ اور ذلت و خاری سے دور رہنے کا نام ہے۔
آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق، یہ مراسم جو کہ 17 آبان ماہ بروز سوموار حرم مطہر رضوی کے صحن انقلاب اسلامی میں اربعین حسینی پر پیدل چل کر آنے والے زائرین کے خادموں کی ایک کثیر تعداد کی موجودگی میں برگزار ہوئے ؛ جس میں حجت الاسلام والمسلمین سید ابراھیم رئیسی نے اربعین پر پیادہ روی کو خاندان اھل بیت عصمت و طہارت(ع) کے ساتھ عشق و محبت کا اظہار اور پروردگار پر پختہ ایمان کانام دیتے ہوئے کہا: مسلمانوں میں جو بھی ابا عبد اللہ الحسین(ع) سے عشق ومحبت رکھتے ہیں وہ با افضل ترین افراد ہیں ؛ یہ وہ لوگ ہیں جو حسینی(ع) تحریک کی پیروی کرتے ہوئے آزادی چاہتے ہیں اور ظلم کے خلاف راستے کو طے کرتے ہیں اور یقیناً یہ لوگ دنیا کے عزت دار ترین انسان ہیں۔
صوبہ خراسان کے حوزہ علمیہ کے اس اعلیٰ رکن نے تاکید کی: اربعین کے اس معنوی سفر پر جانے والوں میں جو وجہ مشترک ہے وہ حضرات معصومین(علیھم السلام) کی ذوات مقدسہ سے عشق و محبت ہے
انہوں نے زیارت اربعین کے ھدف کو انسانوں کی اس مادّی زندگی کو عاشور اورامام حسین(ع) کے ساتھ آخروی زندگی کا ایک پیوند جانتے ہوئے کہا: عاشورہ کے ساتھ پیوند درحقیقت تمام انسانی کمالات کے ساتھ پیوند ہےاور تحریک حسینی کے ساتھ اس پیوند کا باقی رکھنا خدا کی تعلیمات اور بشریت کے ہر دور میں  اور ہر نسل کے ساتھ کس طرح زندگی کرنے کے ارتباط اور پیوند کے باقی رکھنے کے مترادف ہے  ۔
چہلم امام حسین(ع) پر راہ پیمائی بشریت کا سب سے بڑا اجتماع
مجلس خبرگان رھبری کے اس رکن نے اربعین کی راہ پیمائی کو بشریت کا سب سے باشکوہ اجتماع جانا اور اس اجتماع کو دوسرے اجتماعات سے جو فرق ہے وہ خدا اور اھلبیت عصمت وطہارت(ع) سے عشق و محبت جانتے ہوئے کہا: اس زمین پر چہلم امام حسین سے زیادہ با عظمت اور باشکوہ کوئی اجتماع نہیں ہے اور یہ چہلم امام حسین (ع) پر یہ راہ پیمائی دنیا کا سب سے بڑا اجتماع ہے جس کا دوسرے اجتماعات سے بنیادی فرق خدا اور اھلبیت عصمت وطہارت(ع) سے عشق و محبت ہے۔
آستان قدس رضوی کے متولی نے اسلامی جمہوریہ ایران کے انقلاب کوحسینی تحریک کا جلوہ شمار کرتے ہوئے کہا: اس اسلامی انقلاب سے اس ملک میں نھضت حسینی ظاہر ہوئی اور ملت ایران کی پیروی کرتے ہوئے بہت ساری قوموں اور ملتوں میں بیداری آئی اور حسینی آزادی کے راستے کو اپنایا۔ لبنان، فلسطین، بحرین ۔ ۔ ۔ کے لوگوں نے یہ سیکھا کہ ہمیشہ قیام اور مقاوت سے آزادی اور عزت ملتی ہے۔
انہوں نے سامرا میں کئے گئے دہشتگروں کے حملے کی طرف اشارہ کیا جس میں چند ایک ایرانی زائرین بھی شہید ہوئے تھے اور کہا: دہشتگر اور وہ ظالم حکومتیں جو انہیں ایسے کاموں کا حکم دیتے ہیں یہ سمجھتے ہیں کہ دہشتگردی کے ذریعے ہم امام حسین (ع) کے چہلم کو کم رنگ کر سکتے ہیں درحالانکہ ایسے بزدلانہ اقدامات سے حسینیوں کے ارادے اور بھی محکم ہوئے ہیں اور مجھے یقین ہے کہ اس سال بھی امام حسین علیہ السلام کا چہلم اس زمانہ کا با شکوہ ترین اجتماع ہو گا۔
حجت الاسلام والمسلمین رئیسی نے کہا: جیسا کہ پہلے یزیدی یہی تلاش کرتے تھے کہ ابا عبد اللہ الحسین(ع) کا نام باقی نہ رہے ، آج تکفیری،داعشی اور دنیا کے مستکبرین بھی تلاش کر رہے ہیں کہ اربعین حسینی کا یہ با شکوہ ترین اجتماع برگزار نہ ہو کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ چہلم امام حسین(ع) کا یہ اجتماع،ظلم و استکبار کے خلاف سب سے بڑا اجتماع ہے۔

یہ بھی ملاحظہ ہو

aaa

پاکستانی قومی اسمبلی کے نمائندوں کا ایک وفد حرم امام رضا میں زیارت کے لئے حاضر ہوا

پاکستان کی پارلیمنٹ کے چند ایک اراکین کا ایک وفد حرم امام رضا(ع) میں زیارت …

پاسخ دهید

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *