چهار شنبه , سپتامبر 26 2018
مرکزی صفحہ / مشہد و قُمِ مقدس / حرمِ مقدس امام موسیٰ رضا (ع)۔ / یورپین ممالک میں حجاب کی ترویج کرنے والی خواتین امام رضا(ع) کی بارگاہ میں زیارت کے لئے تشریف لائیں
14702437_947838008654590_9186232898218372125_n

یورپین ممالک میں حجاب کی ترویج کرنے والی خواتین امام رضا(ع) کی بارگاہ میں زیارت کے لئے تشریف لائیں

حجاب و عفاف اور ثقافتی میدان میں سرگرم آٹھ خواتین جن کا تعلق ، جرمنی، آسٹریا،نیدرلینڈ اور ترکی سے ہے امام رضا علیہ السلام کی نورانی بارگاہ میں زیارت کے لئے شرفیاب ہوئیں۔
آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق؛ ’’ گولالہ عول کو‘‘ جو کہ ایک ثقافتی فعال خاتون ہیں اور نیدرلینڈ سے تعلق رکھتی ہیں حرم امام رضا علیہ السلام میں حاضر ہونے پر بہت خوش تھیں ، ان کا کہنا تھا: جب سے میں نے حجاب پہنا ہے بہت ساری قوم پرستی کی رفتار اور تحقیر ہوئی ہوں اور حتی بعض اوقات مجھے یونیورسٹی میں پڑھائی جاری رکھنے سے بھی روک دیا گیا۔
فرھنگ حجاب و عفاف کی ترویج کرنے والی اس خاتون کا کہنا تھا: جب سے میں نے حجاب کو اپنے لئے انتخاب کیا بہت سارے دوستوں نے مجھے چھوڑ دیا اور میرا مذاق اڑایا گیا۔
ان کا کہنا تھا: میں نے اسلامی حجاب کو سوچ سمجھ کے ساتھ اختیار کیا نہ کہ مجبور ہو کر اور اسی راستے میں ثابت قدم رہوں گی؛ امام رضا علیہ السلام سے چاہتی ہوں کہ مجھے اس راستے پر ثابت قدم رکھے اور جو ھدف میں نے اپنی زندگی کے لئے انتخاب کیا اس کے ذریعے ہر روز میرے ایمان میں اضافہ ہو۔
آسٹریا سے تعلق رکھنے والی ’’ آرزو چیکن کایا‘‘ جو کہ شاعر اہلبیت علیہم السلام بھی ہیں کہتی ہیں: میں چاہتی ہوں کہ اسلامی اور شیعی مراکز سے جو کہ اسلامی جمہوریہ ایران میں ہیں جن کے شروع میں آستان قدس رضوی ہے ان سے رابطے میں رہوں۔
اس کا کہنا تھا: میں اپنے آپ کو آسٹریا میں امام رضا علیہ السلام کا خادم جانتی ہوں اور اس چیز کو شوق رکھتی ہوں کہ امام ھشتم (ع) کی سیرت اور زندگی کی روش کو یورپین خواتین کو بھی معرفی کروا سکوں۔
ترکی سے تعلق رکھنے والی خاتون ’’ بلکین یالچین‘‘ نے کہا میں امام رضا علیہ السلام کے بہت سارے چاہنے والوں اور محبّوں کا سلام لے کر آئی ہوں، ان کا کہنا تھا: اس سال محرم الحرام میں ہم نے اپنے شہر میں سید الشھداء کی عزاداری کی مناسبت سے خیمے لگائے اور آئی ہوں تاکہ چہلم امام حسین علیہ السلام پر کربلا جانے کے لئے امام رضا علیہ السلام سے اجازت طلب کروں۔
اس کا کہنا تھا: ترکی کے شیعوں نے امام خمینی(رہ) سے بہت زیادہ اثر لیا ہے اور اس چیز کا اعتقاد رکھتے ہیں کہ اس دور میں حقیقی اسلام کو دنیا پر امام (رہ) نے معرفی کروایا ہے۔
ترکی سے تعلق رکھنے والی اس خاتون نے آستان قدس رضوی کے مسئولین سے درخواست کی کہ ثقافتی مصنوعات اور مذھبی مبلغین کو ترکی کے لئے اعزام کریں اور اس ملک کے جوانوں اور عوام کے لئے اہلبیت علیہم السلام کی تعلیمات سے آشنا ہونے کا زمینہ فراہم کریں۔
کہا گیا ہے ؛ اس گروپ نے آستان قدس رضوی کے ادارہ تبلیغات اسلامی کے اسسٹنٹ سے ملاقات کی اور حرم مطہر امام رضا علیہ السلام کے دارالرحمہ ہال میں حاضر ہو کر غیر ایرانی زائرین کے ادارہ کی چند ایک فعالیتوں سے آشنا ہوئیں اور آخر میں اس ادارہ کی مدیریت کی جانب سے انہیں متبرک تحائف بھی ھدیہ کئے گئے۔

یہ بھی ملاحظہ ہو

Untitled-1

ایرانی وزیر دفاع امیر حاتمی کی روضہ مبارک امام علی(ع) میں حاضری

ایران کے وزیر دفاع امیر حاتمی نے آج روضہ مبارک امام علی علیہ السلام میں …

پاسخ دهید

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *