یکشنبه , دسامبر 15 2019
تازہ ترین
مرکزی صفحہ / کربلاء معلیٰ / حرمِ مقدس مولا عباس (ع)۔ / اعلی دینی قیادت ایزدی قوم کے ساتھ اظہار یکجہتی کا اعلان کرتی ہے
بازديد توليت آستان قدس رضوي از طرح هاي محروميت زدايي (6)

اعلی دینی قیادت ایزدی قوم کے ساتھ اظہار یکجہتی کا اعلان کرتی ہے

علی دینی قیادت نخيب اور ثرثار میں داعش کی حالیہ دہشت گردانانہ کاروائیوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے اور ایزدی قوم کی بچیوں کے ساتھ داعشی درندوں کی زیادتی اور ان کے قتل پر گہرے غم وغصہ کا اظہار اور ایزدیوں کے ساتھ یکجہتی کا اعلان کرتی ہے اور اسے موجودہ دور کا نادر سفاکانہ اور وحشیانہ جرم قرار دیتی ہے۔

اس بات کا ذکر اعلی دینی قیادت کے خصوصی نمائندے اور روضہ مبارک امام حسین(ع) کے متولی شرعی علامہ شیخ عبد المہدی کربلائی (دام عزہ) نے (23 جمادی الثانی 1440ھ) بمطابق (1 مارچ 2019ء) کو نماز جمعہ کے دوسرے خطبہ میں کیا روضہ مبارک امام حسین(ع) میں نماز جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے علامہ کربلائی نے کہا:

عزیز بھائیو اور بہنو خطبہ کے موضوع میں داخل ہونے سے پہلے، میں اس ہوناک جرم کے بارے میں بات کرنا چاہتا ہوں جسے بعض میڈیا ہاؤسز نے حال ہی رپورٹ کیا ہے پچاس ایزدی خواتین کے کٹے ہوئے سر ملے ہیں جنہیں داعشی دہشت گردوں نے اغوا کر کے زیادتی کا نشانہ بنایا اور اس کے بعد وحشیانہ طریقے سے قتل کر دیا، اس درندگی کی مذمت کرتے کے لیے الفاظ قاصر ہیں موجودہ زمانے میں اس وحشیانہ جرم کی مثال کا ملنا ممکن نہیں ہے، ہم اس المناک موقع پر اپنے ایزدی لوگوں اور ہم وطنوں کے ساتھ ہمدردی اور اظہار یکجہتی کا اعلان کرتے ہیں اور عراقی حکومت میں موجود متعلقہ محکموں اور عالمی اداروں سے داعش کے جرائم پر نظر رکھنے اور ان مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

عزیز بھائیو اور بہنو خطبہ کے موضوع میں داخل ہونے سے پہلے، میں اس ہوناک جرم کے بارے میں بات کرنا چاہتا ہوں جسے بعض میڈیا ہاؤسز نے حال ہی رپورٹ کیا ہے پچاس ایزدی خواتین کے کٹے ہوئے سر ملے ہیں جنہیں داعشی دہشت گردوں نے اغوا کر کے زیادتی کا نشانہ بنایا اور اس کے بعد وحشیانہ طریقے سے قتل کر دیا، اس درندگی کی مذمت کرتے کے لیے الفاظ قاصر ہیں موجودہ زمانے میں اس وحشیانہ جرم کی مثال کا ملنا ممکن نہیں ہے، ہم اس المناک موقع پر اپنے ایزدی لوگوں اور ہم وطنوں کے ساتھ ہمدردی اور اظہار یکجہتی کا اعلان کرتے ہیں اور عراقی حکومت میں موجود متعلقہ محکموں اور عالمی اداروں سے داعش کے جرائم پر نظر رکھنے اور ان مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

اسی طرح چند دن پہلے صحراء نخيب میں اور ثرثار جھیل کے پاس رزق کی تلاش میں نکلے ہوئے ہمارے نوجوانوں کو داعشی دہشت گردوں نے بے دردی سے قتل کیا ہم ان جرائم اور حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور عراقی حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ان واقعات کے تکرار کو روکنے کے لیے سنجیدہ اور جامع اقدام کرے ان داعشی بھگوڑوں کو تلاش کرے انھیں قرار واقعی سزا دے اور انھیں عراق کے کسی بھی حصے میں امن خراب کرنے کا موقع نہ دے

یہ بھی ملاحظہ ہو

An Iraqi Shi'ite Muslim boy kisses a poster of the Ayatollah Ali al-Sistani in the town of Karbala, some 110 km south from the Iraqi capital Baghdad, early February 6, 2004. Iraq's most powerful Shi'ite cleric, Ayatollah Ali al-Sistani, survived an assassination bid on Thursday when gunmen opened fire on his entourage in the sacred streets of Najaf, a security aide said. The assassination attempt comes days before a team of United Nations electoral experts is due to arrive in the country to assess the feasibility of holding early elections along the lines that Sistani has demanded. REUTERS/Ali Jasim  PP04020063 OP/CRB - RTRC0XD

آیت‌الله سیستانی کا عراق میں حالیہ مظاہروں کے حوالے سے تحقیقات کا مطالبہ

نامور مرجع تقلید نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا کہ حالیہ مظاہروں اور ذمہ داروں …

پاسخ دهید

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *