چهار شنبه , آگوست 21 2019
تازہ ترین
مرکزی صفحہ / مشہد و قُمِ مقدس / حرمِ مقدس امام موسیٰ رضا (ع)۔ / ۸۰۰ نئے شادی شدہ جوڑوں کو جہیز کے ضروری سامان کی فراہمی
800 جهيزيه آستان قدس

۸۰۰ نئے شادی شدہ جوڑوں کو جہیز کے ضروری سامان کی فراہمی

حرمطہر رضوی کے متولی  حجت الاسلام رئیسی  نے کہا ہے کہ اسلامی تعلیمات کی بنیاد پر ایک ایسی  تہذیب و تمدن  کو رائج کیا جاسکتا ہے  جس میں اخلاقی اقدار ، سماجی انصاف اور  احکام الہی حکمفرما ہوں
آستان نیوز کی رپورٹ کی مطابق؛ پسماندگی کے خاتمہ اور نئے شادی شدہ جوڑوں کو جہیز کا ضروری سامان  بطور ہدیہ  فراہم کرنے کی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے  حجت الاسلام والمسلمین سید ابراہیم رئیسی نے      کہا کہ  ایران کا اسلامی نظام  حکومت ایسی تہذیب و تمدن کو وجود میں لانا  چاہتاہے  جس میں  خودمختاری و  آزادی ہو اور جہاں لوگ دیندار و  متدین ہوں۔  ان کا کہنا تھا کہ اس  تہذیب و تمدن کی خصوصیت یہ بھی ہوکہ  اس میں لوگ      خدائی نعمتوں  بہرہ مند ہونے کے ساتھ ساتھ ایسے تشکیل شدہ  قرآنی معاشرے میں زندگی بسریں جو ظلم و جور، بداخلاقیوں اور الحاد سے پاک ہو۔

حرم مطہر کے متولی اور مجلس خبرگان رہبری کے رکن  حجت الاسلام رئیسی  نے کہا   اپنے  خطاب میں کہا  کہ اسلامی تعلیمات کی بنیاد پر ایک ایسی  تہذیب و تمدن  کو رائج کیا جاسکتا ہے  جس میں اخلاقی اقدار ، سماجی انصاف اور  احکام الہی حکمفرما ہوں  اور ررہبرانقلاب اسلامی   نے اسلامی انقلاب کی کامیابی کی چالیسویں سالگرہ کی مناسبت سے جاری کردہ اپنے اہم بیان میں جسے دوسرے قدم کے زیرعنوان انقلابی منشور کا نام دیا گیا ہے    ایسے مطالب بیان فرمائے ہیں جن سے اس طرح کے  معاشرے اور تمدن کا حصول ممکن ہے۔

آستان قدس رضوی کے  متولی نے خادمیاران(اعزازی خادموں) کے منصوبہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ آج حضرت امام علی رضا علیہ السلام کے مقدس نام کی برکت سے وسیع پیمانے پر خدمت کی جا سکتی ہے۔ انہوں نے خادم، خدمت اور مخدوم کے مفہوم کی وسعت کا ذکرکرتے ہوئے کہا کہ   کوئی شخص بھی  خودکو دوسرے کا محتاج نہیں سمجھتا  سب حضرت علی بن موسیٰ الرضا علیہ السلام کے خادم ہیں اور  ہر شخص خود کو صرف  خداوند متعال کی عنایات کا محتاج اور ضرورتمند پاتاہے ۔

غربت و پسماندگی  کے خاتمے  سے متعلق آستان قدس رضوی میں   تشکیل دیئے جانے والے ادارہ کے سربراہ جناب حامد صادقی نے بھی اس موقع پر کہا  کہ غربت کے خاتمہ کے اس  منصوبے  میں ایسے جوان مدّ نظر ہیں جو پسماندہ  علاقوں میں زندگی بسر کر رہے ہیں اور ایسے علاقوں کے جوانوں کو  ترقی و پیشرفت کے میدان میں آگے بڑھنے کا موقع فراہم کیا جارہاہے   ۔

انہوں نے  کہا کہ آستان قدس رضوی میں غربت کے خاتمہ کے لئے تشکیل دئے جانے والے ادارہ کی توجہ عوام پر مرکوز ہوگی   اور تمام تر خدمات اور   انقلابی اداروں کے  تعاون  سے انجام پائيں گی  ۔ ان کا کہنا تھا کہ      نئے۸۰۰   شادی شدہ جوڑوں کو جہیز کا ضروری سامان آستان قدس رضوی،  سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی ،امام خمینیؒ امدادی  کمیٹی،فلاحی ادارے اور مخیر حضرات کے تعاون سے فراہم کیا گیا ہے  جس میں چولہا،فریج،قالین،گیس ہیٹر،وکیوم،پنکھا،چینی کا سیٹ،پتیلوں کا سیٹ اور چمچ و کانٹے کا سیٹ شامل ہے

یہ بھی ملاحظہ ہو

مراسم تکريم و معارفه 2

حرم مطہر رضوی کے خدام کا جذبہ انسان دوستی اور احساس ذمہ داری قابل قدر ہے:متولی آستان قدس

آستان قدس رضوی کے متولی  حجت الاسلام احمد مروی نے کہا ہے  کہ  حالیہ سیلاب …

پاسخ دهید

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *