دوشنبه , نوامبر 11 2019
تازہ ترین
مرکزی صفحہ / کربلاء معلیٰ / حرمِ مقدس مولا عباس (ع)۔ / عباس عسکری یونٹ کے تیار کردہ (الکفیل ٹینک/1) کی رونمائی
7ea5d1de930d61a0bb7857bd551cdea3

عباس عسکری یونٹ کے تیار کردہ (الکفیل ٹینک/1) کی رونمائی

بروز جمعرات (9شوال 1440ء) بمطابق (13 جون 2019ء) کو عباس عسکری یونٹ کے ریسرچ اور ڈولمنٹ سنٹر میں بنائے گئے (الکفیل ٹینک/1) کی تقریب رونمائی علقمی سٹی برائے زائرین میں ہوئی۔

اس تقریب میں روضہ مبارک حضرت عباس(ع) کے سیکرٹری جنرل، حرم کی مجلس ادارہ کے ارکان، اعلی فوجی و سویلین حکام اور صحافیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

تقریب کا آغاز تلاوت قرآن مجید اور شہداء کے لیے فاتحہ خوانی سے ہوا جس کے بعد بالترتیب عباس عسکری یونٹ کے سربراہ شیخ میثم زیدی اور کربلا کی اسمبلی کے سپیکر نصيف جاسم الخطابي نے خطاب کیا اور مقامی سطح پر اسلحہ اور بھاری مشینری کی تیاری کو خود انحصاری کی طرف بڑھتا ہوا قابل تحسین قدم قرار دیا۔

اس کے بعد ٹینک کی تیاری کے مختلف مراحل اور اس منصوبے کے بارے میں حاضرین کو دستاویزی فلم دکھائی گئی۔

یہ بتاتے چلیں کہ: ( الکفیل ٹینک/ 1) مندرجہ ذیل خصوصیات کا حامل ہے:

    1. یہ ٹینک (360 ڈگری) سے (14 کلومیٹر) کے فاصلے تک دن اور رات دونوں اوقات میں دشمن کا پتہ لگانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

    1. کاربن اور فولاد سے بنائی گئی مضبوط باڈی۔

    1. اس میں روسی توپ (D-1T) نصب کی گئی ہے کہ جو براہ راست (4 کلومیٹر) تک اور (17 کلومیٹر) تک قوسی گولہ بالہ باری کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے، اس پر تین بھاری مشین گنیں بھی ہیں جنھیں اندر بیٹھ کر کنٹرول کیا جاتا ہے۔

    1. ہدف کو نشانہ بنانے کے لیے مقامی سطح پر تیار کردہ کمپیوٹرائزڈ نظام بھی اس میں نصب ہے کہ جو اردگرد کے بارے میں بھی خبر دیتا ہے۔

  1. عملے کے لئے آرامدہ اور محفوظ بنانے کے لیے اندرونی کنڈیشنگ نظام، کھانے پینے کے سامان کی جگہ اور برج کے پیچھے گولہ بارور کی جگہ بنائی گئی ہے۔

یہ بھی ملاحظہ ہو

An Iraqi Shi'ite Muslim boy kisses a poster of the Ayatollah Ali al-Sistani in the town of Karbala, some 110 km south from the Iraqi capital Baghdad, early February 6, 2004. Iraq's most powerful Shi'ite cleric, Ayatollah Ali al-Sistani, survived an assassination bid on Thursday when gunmen opened fire on his entourage in the sacred streets of Najaf, a security aide said. The assassination attempt comes days before a team of United Nations electoral experts is due to arrive in the country to assess the feasibility of holding early elections along the lines that Sistani has demanded. REUTERS/Ali Jasim  PP04020063 OP/CRB - RTRC0XD

آیت‌الله سیستانی کا عراق میں حالیہ مظاہروں کے حوالے سے تحقیقات کا مطالبہ

نامور مرجع تقلید نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا کہ حالیہ مظاہروں اور ذمہ داروں …

پاسخ دهید

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *