دوشنبه , نوامبر 11 2019
تازہ ترین
مرکزی صفحہ / کربلاء معلیٰ / حرمِ مقدس مولا عباس (ع)۔ / قرآن مرکز کی جانب ’’أمير القرّاء الوطنيّ’’ پراجیکٹ کے تحت موسم گرما کی تعطیلات کے دوران پرائمری اور مڈل سکول کے بچوں کےلئے قرآن کورس کا انعقاد
c4af44d53c8f017f6eabefa61f6a6a79

قرآن مرکز کی جانب ’’أمير القرّاء الوطنيّ’’ پراجیکٹ کے تحت موسم گرما کی تعطیلات کے دوران پرائمری اور مڈل سکول کے بچوں کےلئے قرآن کورس کا انعقاد

روضہ مبارک حضرت عباس علیہ السلام کے قرآن مرکز کی جانب ’’أمير القرّاء الوطنيّ’’ پراجیکٹ کے تحت موسم گرما کی تعطیلات کے دوران پرائمری اور مڈل سکول کے بچوں کو تلاوت قرآن پاک سکھانے اور دینی و قرآنی تعلیمات سے آگاہی فراہم کرنے کےلئے قرآن کورس کا انعقاد کیا گیا ہے۔ اس پروجیکٹ قرآن فہمی اور اسلامی تعلیمات کے فروغ اور بین الاقوامی سطح پر قاریان قرآن تیار کرنے کے لیے پچھلے پانچ سالوں سے مسلسل ایسے پروگراموں اور کورسز کا انعقاد کیا جارہا ہے۔

قرآن مرکز کے ڈائریکٹر القارئ السيد حسنين الحلو نے الکفیل نیٹ ورک سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام کے ذریعے ہم مختصر مدت میں بچوں کو فنی اور تکنیکی بنیادوں اور جدید طریقہ تدریس کے ذریعے قرآن پاک کی قرات و تلاوت سکھائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس کورس میں 120 بچے شمولیت کر رہے ہیں ان بچوں کو پانچ گروپس میں تقسیم کیا گیا ہے اور ہر گروپ کو عالمی شہرت یافتہ قاریان قرآن کے انداز اور طرز تلاوت پر قرآن پاک کی تلاوت سکھائی جائے گی۔ جو درج ذیل ہیں۔

حافظ خلیل اسماعیل (عراقی انداز)

الشيخ عبد الفتّاح الشعشاعيّ،

الشيخ محمد صدّيق المنشاوي،

الشيخ الشحّات محمّد أنور،

الشيخ أبو العينين شعيشع،

اس پروگرام میں پاپولر موبلائزیشن کے شہداء اور غازیوں کے بچوں پر مشتمل ایک سپیشل ڈویژن بھی شامل ہے۔ شہداء اور غازیوں کے بچوں کو خصوصی طور پر اس پروگرام میں شریک کیا گیا ہے۔ یہ کورس دو ماہ پر مشتمل ہے اور بچوں کی قرآن کلاسسز روضہ مبارک حضرت عباس علیہ السلام کے العلقمی کمپلیس میں جاری ہیں۔ ہر گروپ کے بچوں کو تلاوت قرآن پاک سکھانے کے لیے ممتاز اساتذہ اور ماہرین کی خدمات حاصل کی جا رہی ہیں۔

یہ بھی ملاحظہ ہو

An Iraqi Shi'ite Muslim boy kisses a poster of the Ayatollah Ali al-Sistani in the town of Karbala, some 110 km south from the Iraqi capital Baghdad, early February 6, 2004. Iraq's most powerful Shi'ite cleric, Ayatollah Ali al-Sistani, survived an assassination bid on Thursday when gunmen opened fire on his entourage in the sacred streets of Najaf, a security aide said. The assassination attempt comes days before a team of United Nations electoral experts is due to arrive in the country to assess the feasibility of holding early elections along the lines that Sistani has demanded. REUTERS/Ali Jasim  PP04020063 OP/CRB - RTRC0XD

آیت‌الله سیستانی کا عراق میں حالیہ مظاہروں کے حوالے سے تحقیقات کا مطالبہ

نامور مرجع تقلید نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا کہ حالیہ مظاہروں اور ذمہ داروں …

پاسخ دهید

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *